Poetry of jaun elia in urdu

0
34

ASSLAM O ALIKUM this article is Poetry of jaun elia in urdu, and jaun elia sad poetry,and explain jaun elia best lines urdu sms text with img you can easily copy and past & share with friends and family.

(jaun elia about in urdu )

جون ایلیا ایک ممتاز پاکستانی اردو شاعر، فلسفی، سوانح نگار اور عالم تھے۔ وہ 14 دسمبر 1931 کو امروہہ، برطانوی ہندوستان (اب اتر پردیش، ہندوستان میں) میں پیدا ہوئے اور 8 نومبر 2002 کو کراچی، پاکستان میں انتقال کر گئے۔

ایلیا اپنی گہری اور خود شناسی شاعری کے لیے جانا جاتا تھا، جس میں اکثر وجودیت، محبت، فلسفہ، اور زندگی کی پیچیدگیوں کے موضوعات کو تلاش کیا جاتا تھا۔ ان کی شاعری اپنی گہری بصیرت، فکری گہرائی اور منفرد اسلوب کی حامل تھی۔ اس نے اپنے کام کے ذریعے معاشرتی اصولوں اور کنونشنوں کو چیلنج کیا، ایک ایسا نقطہ نظر پیش کیا جو بہت سے لوگوں کے ساتھ گونجتا تھا۔

جون ایلیا کی شاعری نے بعد از مرگ بڑے پیمانے پر مقبولیت حاصل کی، اور انہیں اردو زبان کے سب سے زیادہ بااثر شاعروں میں سے ایک کے طور پر جانا جاتا ہے۔ ان کے شعری مجموعے، جن میں “شاید” اور “یانی” شامل ہیں، اردو شاعری کے شائقین میں بہت اہمیت کے حامل ہیں۔ ایلیا کا کام اپنے جذبات کی گہرائی اور فلسفیانہ موسیقی کے ساتھ قارئین کی نسلوں کو متاثر کرتا رہتا ہے۔

jaun elia shayari 

(جون ایلیا شاعری)

Poetry of jaun elia in urdu


کتنا رویا تھا میں تیری خاطر

اب جو سوچوں تو ہنسی آتی هے

Kitna roya tha main teri khatir

Ab jo socho to hansi ati hai

Poetry of jaun elia in urdu
ہم جی رہے ہیں کوئی بہانہ کیے بغیر

اُس کے بغیر، اُس کی تمنا کیے بغیر

Hum jee rahy hain koi bahana kiya baghir

aus k baghir aus ki tamana kiya baghir

Poetry of jaun elia in urdu
مجھ کو عادت ہے روٹھ جانے کی

آپ مجھ کو منا لیا کیجے

mujh ko adat hai roth jany ki

Ap mujh ko mana lia kro

Poetry of jaun elia in urdu
تیری آنکھیں بھی کیا مصیبت ہیں

میں کوئی بات کہنے آیا تھا

Teri ankhin bhi musebat hain

main koi bat kheny aya tha

Poetry of jaun elia in urdu

کیا کہا میرے لیئے سنورتی ہو

کیا میں اس قدر تمہارا ہوں

kia kaha liya sanwarti ho

kia main is qadar tumhara hon

Poetry of jaun elia in urdu

مجھ سے بچھڑ کر بھی وہ لڑکی کتنی خوش خوش رہتی ہے

اس لڑکی نے مجھ سے بچھڑ کر مر جانے کی ٹھانی تھی

mujh say bichar kar bhi wo larki kitni kush kush rehti hai

is larki ny mujh say bichar kar mar jany ki thani thi

کیا میں آنگن میں چھوڑ دوں سونا

جی جلائے گی چاندنی کب تک

kia main angan main chor don sona

je jalay gi chandni kab tak

میرا اک مشورہ ہے التجا نہیں

تو میرے پاس سے اس وقت جا نہیں

mera ek mashawara hai iltaja nhe

tu mere pass say is waqhat ja nhe

ایسی باتوں پہ میری جان ، لڑائی کیسی ؟

تُو نے چھوڑا ھے تو کُچھ سوچ کہ چھوڑا ہو گا

easi bato pay meri jan larai kesi

tu nay chora hai to kuch soch ky chora ga

ڈر ہے کہ چبا نہ جائیں کلیجہ نکال کر

رہتے ہیں تیرے شہر میں ہندہ مزاج لوگ

dar hai khay chaba na jay klija nial kar

rehtay tery shair main banda mizaj

لوگ مصروف جانتے ہیں مجھے

یاں میرا غم ہی میری فُرصت ہے

log masroof jantay hai mujhy

ha mera gum he meri fursat hai

اس کی تقدیرے ناز کا ہم سے یہ مان تھا کے آپ

عمر گزار دیجیے عمر گزار دی گئ

ia ki taqdery naz ka hum say ye man tha kay ap

umer guzar digiya umer guzar de gai

تم نے چھوڑا تھا عادتن مجھ کو

اب مشقت کرو کماؤ مجھے

tum nay chora tha atadan mujh ko

ab mushaqqt karo kamao mujh ko

منا رہا ہوں تیرے بعد برسیاں اپنی

کہ جی لیا تیرے ساتھ جتنا جینا تھا

mana raha hon teray bad bersiysn apni

kahay je liya teray sath jitna jena tha

کیا ستم ہے اب تیری صورت

غور کرنے پہ یاد آتی ہے

kia sitam hai ab teri surat

ghor karny pay yad ati hai

کیا آپ مجھ سے ملنے کو آئے ہیں۔۔۔

بیٹھیے بلا کے لاتا ہوں

kia ap mujh say milnay ko ay

bhetiya bula kay lata hon

سب نے نکالا میرے اشعار سے اپنا مطلب۔۔

اصل مطلب سے بھلا کسی کو کیا مطلب

sab nay nikala apna matlb

asal matlb say bhala kisi ko kia matlb

مِل رہی ہو بڑے تپاک کے ساتھ

آخری بار مِل رہی ہو کیا

mil rehai hon baray tapak kay sath

akhri bar mil rahi ho kia

ہم سنے اور سنائے جاتے تھے

رات بھر کی کہانیاں تھے ہم

hum sunay aur sunay jatay thy

rat bhar ki khaniyan thy hum

ہیں دلیلیں تیرے خلاف مگر

سوچتا ہوں اب تیری حمایت میں

زندگی کس طرح بسر ہوگی

دل نہیں لگ رہا محبت میں

Hain dalilain tery khilaf magar

sochta hon ab teri himayat main

zindagi kis tarha basir hogi

dil nhe lag rha mohabbat main

urdu poetry of john elia
وہ بھی برا لکھتے رہے

جنہیں ساری عمر کاندھوں پہ بیٹھائے رکھا

wo bhi bura likhty rahy

jinhy sari umar kandhon par bethy rakha

نا کرو بحث ہار جاؤگی

حسن اتنی بڑی دلیل نہیں

na karo behas har jao gi

husn atni bari daleel nhi

اچھا ہوا جو آپ کی پہچان ہو گئی

اچھا کیا جو آپ نے اچھا نہیں کیا

acha howa jo apki pehchan ho gai

acha kia jo apny acha nhe kia

ہو رہا ہوں میں کس طرح برباد

دیکھنے والے ہاتھ ملتے ہیں

ho raha hoon main kis tara barbad

dekhny waly hath milaty hain

ب آؤ گی تو کھویا ہوا پاؤ گی مجھے

میری تنہائی میں خوابوں کے سوا کچھ نہیں

ab ao gi to khoya howa pao gi mujhy

meri tanhyan main khabo k siwa kuch nhi

ﯾﻮﻧﮩﯽ ﺭﻧﮕﺖ ﻧﮩﯿﮟ ﺍْﮌﯼ ﻣﯿﺮﯼ

ﮨﺠﺮ ﮐﮯ ﺳﺐ ﻋﺬﺍﺏ ﭼﮑﮭﮯ ﮨﯿﮟ

yoh hi rangat nhe uri meri

hijar kay sab azab chakhy hain

Poetry of jaun elia in urdu

غم میں ملا کر خوشی کے رنگ

آؤ جینے کی ذرا اداکاری کریں

gum main mila kar khusi k rang

ao jeny ki zara adakari krin

میں نے سب خواہشوں کو ٹال دیا

اپنے دل سے تمہیں نکال دیا

main nay sab khawasion ko tal diya

apny dil say tumhin nikal diya

یہ مجھے چین کیوں نہیں پڑتا

ایک ہی شخص تھا جہان میں کیا

ya mujhy chan q nhe parta

aik hi shaks tha jaha m kia

Poetry of jaun elia in urdu

تم جو ہوتے کبھی ساتھ نبھانے والے*

*محبتوں میں ہمارا قِصّہ مثال ہوتا

tum jo hoty kbhi sath nubhny waly

mohbton main humra qisa misal hota

میرے کمرے کو سجانے کی تمنا ہے تمہیں

میرے کمرے میں کتابوں کے سوا کچھ نہیں

mery kamry ko sajany ki tamna hai tumhin

mery kamry main kitabon kay siwa kuch nhe

کل کا دن ہائے کل کا دن اے جونؔ

کاش اس رات ہم بھی مر جائیں

kal ka din hay kal ka din ay John

kash aus rat hum bhe mar jatay

زندگی کس طرح بسر ہوگی

دل نہیں لگ رہا محبت میں

zindagi kis tarha basir ho gi

dil nhe lag rha mohabat main

تو بس سر ہی مانگتا ہے میاں

عشق پر کربلا کا سایہ ہے

to bas sir hi mangta hai miyan

ishq par karbala ka saya hai

Poetry of jaun elia in urdu

کون کہتا ہے مجھ سے پوچھا جائے گا

کیا مجھ سے پوچھ کر مجھے پیدا کیا گیا تھا

kon kheta hai mujh say pocha jay ga

kia mujh say poch kr mujhy peda kia giya tha

نہیں دینا میں نے حساب زندگی کا

کیا مجھ سے پوچھ کر مجھے بنایا گیا تھا

nhe dena main nay hisab zindagi ka

kia mujh say pocha kar mujhy banaya gya tha

کہاں ہو تم ذرا پاس تو آو

کہاں ہوں میں ذرا پتا تو چلے

kaha ho tum zara pass to ao

kaha hon main Zara pata to chly

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here