Allama iqbal quotes in urdu

0
28

in this article you will provide Allama iqbal quotes in urdu . allama iqbal quotes in urdu for students.and this article is urdu sms text you can easily copy and past and easily share with friends.

(Allama iqbal about in urdu)

لامہ محمد اقبال (1877–1938) برطانوی ہندوستان میں ایک مشہور فلسفی، شاعر، اور سیاست دان تھے جنھیں وسیع پیمانے پر تحریک پاکستان کی تحریک کے طور پر جانا جاتا ہے۔ ان کا شمار جدید دور کی اردو ادب اور فارسی شاعری کی اہم ترین شخصیات میں ہوتا ہے۔ ان کی شاعری، اردو اور فارسی دونوں زبانوں میں، روحانیت، فلسفہ، سیاست، اور مسلمانوں کے سماجی و اقتصادی حالات سمیت بہت سے موضوعات پر روشنی ڈالتی ہے۔

(اقبال شاعری)

اور یہ اہلِ کلیسا کا نظامِ تعلیم
ایک سازش ہے فقط دین و مُروّت کے خلاف
Aur Ye Ahle-e-Kalisa Ka Nizam-e-Taleem
Aik Sazish Hai Faqt Deen-o-Murawat Ke Khilaf
Allama iqbal quotes in urdu
افراد کے ہاتھوں میں ہے اقوام کی تقدیر
ہر فرد ہے ملّت کے مقدر کا ستارا
Afrad Ke Hathon Mein Hai Aqwam Ki Taqdeer
Har Fard Hai Millat Ke Muqaddar Ka Sitara

Allama Iqbal Poetry in urdu 2 lines for students

Allama iqbal quotes in urdu
خدا نے آج تک اس قوم کی حالت نہیں بدلی
نہ ہو جس کو خیال آپ اپنی حالات کے بدلنے کا..
Hadsa Jo Abhi Perda E Aflaak Mai Hay
Aks Uska Meray Aaena Aay Adraak Mai Hay..
 Khird Se Ke Bahane Na Tarash
Allama iqbal quotes in urdu
اُس جُنوں سے تجھے تعلیم نے بیگانہ کِیا
جو یہ کہتا تھا خرد سے کہ بہانے نہ تراش
Uss Junoon Se Tujhe Taleem Ne Begana Kiya
Jo Ye Kehta Tha Khird Se Ke Bahane Na Tarash
Allama iqbal quotes in urdu
ان غلاموں کا یہ مسلک ہے کہ ناقص ہے کتاب
کہ سِکھاتی نہیں مومن کو غلامی کے طریق
In Ghulamon Ka Ye Maslak Hai Ke Naqis Hai Kitab
Ke Sikhati Nahin Momin Ko Ghulami Ke Tareeq!
 Jawanon Ki Khudi Soorat-e-Foulad
Allama iqbal quotes in urdu
اُس قوم کو شمشیر کی حاجت نہیں رہتی
ہو جس کے جوانوں کی خودی صورتِ فولاد
Uss Qoum Ko Shamsheer Ki Hajat Nahin Rehti
Ho Jis Ke Jawanon Ki Khudi Soorat-e-Foulad
 Khird Se Ke Bahane Na Tarash
Allama iqbal quotes in urdu
تیرے عشق کی انتہا چاہتا ہوں
میری سادگی دیکھ میں کیا چاہتا ہوں
Tere Ishq ki inteha Chahta hoo
meri sadgi dekh main kia chahta hoo
allama iqbal poetry on education
Allama iqbal quotes in urdu
اپنے کردار پر پردہ ڈال کر اقبال
ہر شخص کہہ رہا ہے زمانہ خراب ہے
Apnay kerdaar pr prda Daal kr IQBAL
har shakhs keh rha hy zamana khrab hy
جفا جو عشق میں ہوتی وہ جفا ہی نہیں
ستم نہ ہو تو محبت میں کچھ مزا ہی نہیں
Jafa jo Ishq mai hooti wo jafa hi nhi
sitam no ho to muhabbat mai kuch maza hi nhi
Allama Iqbal poetry in Urdu 2 lines for students
allama iqbal poetry urdu
نشانِ سجدہ سجا کر بہت غرور نہ کر
وہ نیتوں سے نتیجے نکال لیتا ہے
Nishane sajda saja kr bhut ghuroor no kr
wo neeatoo say nateejay nekaal laita hy
فقط نگاہ سے ہوتا ہے فیصلہ دل کا
نہ ہو نگاہ میں شوخی تو دلبری کیا ہے
Faqat negaah say owta hy faisla dil ka
no ho negaah mai shookhi to dlairee kia hy
اسے صبح ازل انکار کی جرآت ہوئی کیونکر
مجھے معلوم کیا وہ رازداں تیرا ہے یا میرا
esay subh azal inkaar ki jurat hui kioonkar
mujhay maaloom kia wo razdaan tera hy ya mera
iqbal poetry jhapatna platna palat kr jhapatna
lahoo garam rakhnay ka hy ik bahana
جھپٹنا ، پلٹنا، پلٹ کر جھپٹنا
لہو گرم رکھنے کا ہے اک بہانہ
jhapatna platna palat kr jhapatna
lahoo garam rakhnay ka hy ik bahana
iqbal poetry Tere Aazad bndoo ki na ye dunya na wo dunya
yahaan marnay ki pabandi wahan jeenay ki paabandi
ترے آزاد بندوں کی نہ یہ دنیا نہ وہ دنیا
یہاں مرنے کی پابندی وہاں جینے کی پابندی
Tere Aazad bndoo ki na ye dunya na wo dunya
yahaan marnay ki pabandi wahan jeenay ki paabandi
iqbal poetry mooti samajh kr shane kareemi ne chun lieay
qatray jo tujhay meray arqe infeaal ky
موتی سمجھ کر شانِ کریمی نے چن لیے
قطرے جو تھے میرے عرقِ انفعال کے
mooti samajh kr shane kareemi ne chun lieay
qatray jo tujhay meray arqe infeaal ky
اقبالؔ! یہاں نام نہ لے علمِ خودی کا
موزُوں نہیں مکتب کے لیے ایسے مقالات
Iqbal! Yahan Naam Na Le Ilm-e-Khudi Ka
Mozoon Nahin Maktab Ke Liye Aese Maqalat

Allama Iqbal poetry for students two lines

ان غلاموں کا یہ مسلک ہے کہ ناقص ہے کتاب
کہ سِکھاتی نہیں مومن کو غلامی کے طریق
In Ghulamon Ka Ye Maslak Hai Ke Naqis Hai Kitab
Ke Sikhati Nahin Momin Ko Ghulami Ke Tareeq!
سبق پھر پڑھ صداقت کا عدالت کا شجاعت کا
لیا جائے گا تُجھ سے کام دُنیا کی امامت کا
Sabaq Phir Parh Sadaqat Ka, Adalat Ka, Shujaat Ka
Liya Jaye Ga Tujh Se Kaam Dunya Ki Imamat Ka
اُس قوم کو شمشیر کی حاجت نہیں رہتی
ہو جس کے جوانوں کی خودی صورتِ فولاد
Uss Qoum Ko Shamsheer Ki Hajat Nahin Rehti
Ho Jis Ke Jawanon Ki Khudi Soorat-e-Foulad
جس علم کی تاثیر سے زن ہوتی ہے نا زن
کہتے ہيں اسی علم کو ارباب نظر موت
Jis Ilm Ki Taseer Se Zan Hoti Hai Na-Zan
Kehte Hain Ussi Ilm Ko Arbab-e-Nazar Mout
ترے علم و محبّت کی نہیں ہے انتہا کوئی
نہیں ہے تجھ سے بڑھ کر سازِ فطرت میں نَوا کوئی
Tere Ilm-O-Mohabbat Ki Nahin Hai Intaha Koi
Nahin Hai Tujh Se Barh Kar Saaz-E-Fitrat Mein Nawa Koi

Allama Iqbal poetry in Urdu for students 2 lines

اور یہ اہلِ کلیسا کا نظامِ تعلیم
ایک سازش ہے فقط دین و مُروّت کے خلاف
Aur Ye Ahle-e-Kalisa Ka Nizam-e-Taleem
Aik Sazish Hai Faqt Deen-o-Murawat Ke Khilaf
افراد کے ہاتھوں میں ہے اقوام کی تقدیر
ہر فرد ہے ملّت کے مقدر کا ستارا
Afrad Ke Hathon Mein Hai Aqwam Ki Taqdeer
Har Fard Hai Millat Ke Muqaddar Ka Sitara
اُس جُنوں سے تجھے تعلیم نے بیگانہ کِیا
جو یہ کہتا تھا خرد سے کہ بہانے نہ تراش
Uss Junoon Se Tujhe Taleem Ne Begana Kiya
Jo Ye Kehta Tha Khird Se Ke Bahane Na Tarash
نہيں تيرا نشيمن قصر سلطانی کے گنبد پر
تو شاہيں ہے ، بسيرا کر پہاڑوں کی چٹانوں ميں
Nahin Tera Nasheman Qasr-e-Sultani Ke Gunbad Par
Tu Shaheen Hai, Basera Kar Paharon Ki Chatanon Mein
ترے صوفے ہیں افرنگی ترے قالیں ہیں ایرانی
لہو مجھ کو رلاتی ہے جوانوں کی تن آسانی ..
خدا تجھے کسی طوفاں سے آشنا کر دے
کہ تیرے بحر کی موجوں میں اضطراب نہیں ..
اٹھو مری دنیا کے غریبوں کو جگا دو
کاخ امرا کے در و دیوار ہلا دو ..
ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں
ابھی عشق کے امتحاں اور بھی ہیں ..
الفاظ و معاني ميں تفاوت نہيں ليکن
ملا کي اذاں اور مجاہد کي اذاں اور..
Sitaron Se Aage Jahan Aur Bhi Hain
Abhi Ishq Ke Imtehan Aur Bhi Hain..
Na Toun Zameen K Lia Hai Na Asmaan K Lia
Jahan Hai Tere Lia Toun Nahin Jahan K Lia..
Zameer jag hi jata hai, ager zindah ho iqbal
kabhi gunah se pehle, to kabhi gunah k bad…
پرندوں کی دنیا کا درویش ہوں میں
کہ شاہیں بناتا نہیں آشیانہ..
خدا نے آج تک اس قوم کی حالت نہیں بدلی
نہ ہو جس کو خیال آپ اپنی حالات کے بدلنے کا..
Hadsa Jo Abhi Perda E Aflaak Mai Hay
Aks Uska Meray Aaena Aay Adraak Mai Hay..

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here